قومی سلامتی کے مشیر نے بھی اسرائیلی حکام سے خفیہ ملاقات کی تردید کردی

وزیراعظم کے مشیر برائے قومی سلامتی معید یوسف نے بھی اسرائیلی حکام سے ملاقات کی تردید کردی۔

ٹوئٹر پر جاری بیان میں معید یوسف نے کہا کہ پتاچلا ہےکہ ایک بڑی سیاسی جماعت کی جانب سے کہا گیا کہ میں خفیہ طور پر اسرائیلی حکام سے ملا ، یہ بہت مایوس کن ہے۔

https://help.twitter.com/en/twitter-for-websites-ads-info-and-privacy

انہوں نے کہا کہ یہ بات ریکارڈ پر ہے کہ میری کبھی کسی اسرائیلی حکام سے کوئی میٹنگ نہیں ہوئی اور نہ ہی میں کسی آفیشل دورے پر اسرائیل گیا۔

https://help.twitter.com/en/twitter-for-websites-ads-info-and-privacy

یہ بھی پڑھیں
ذلفی بخاری کے دورہ اسرائیل کی خبریں بے بنیاد اور گمراہ کن ہیں، دفترخارجہ
ذلفی بخاری نے اسرائیل کے خفیہ دورے کے اسرائیلی اخبار کے دعوے کو مسترد کردیا
معید یوسف کا کہنا تھا کہ اسرائیل کے معاملے پروزیراعظم کا موقف واضح ہے، پاکستان فلسطین کے حقوق اور دو ریاستی حل کے لیے کھڑا رہے گا۔

اس سے قبل ترجمان دفتر خارجہ نے بھی وزیراعظم کے سابق معاون خصوصی ذلفی بخاری کے اسرائیل کے دورے کی تردید کی تھی اور خود ذلفی بخاری نے بھی ان خبروں کو بے بنیاد اور احمقانہ قرار دیا۔

واضح رہےکہ اسرائیلی اخبار نے اسلام آباد ذرائع کے حوالے سے اپنی رپورٹ میں دعویٰ کیا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کے سابق معاون خصوصی ذلفی بخاری نے نومبر 2020 کے آخری ہفتے میں اسرائیل کا ایک مختصر خفیہ دورہ کیا جس میں انہوں نے موساد چیف سے ملاقات کی اور ایک اہم شخصیت کی طرف سے پیغام بھی پہنچایا، دورے کا مقصد سینیئر اسرائیلی عہدیداروں سے ملاقات کرنا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں