آئندہ دنوں میں افغان حکومت سے امن مذاکرات میں تیزی آئے گی: طالبان ترجمان

طالبان کی جانب سے آئندہ ماہ افغان حکومت کو امن کے لیے روڈ میپ کا تحریری مسودہ دیے جانےکا امکان ہے۔

برطانوی نیوز ایجنسی کو انٹرویو میں ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد نےکہا ہےکہ آنے والے دنوں میں افغان حکومت سے امن مذاکرات میں تیزی آئے گی، ہوسکتا ہے دونوں جانب سے امن و امان کے لیےکسی تحریری منصوبےکی تیاری میں ایک ماہ لگ جائے۔

یہ بھی پڑھیں
طالبان کا افغانستان کے 200 سے زائد اضلاع پر کنٹرول حاصل کرنے کا دعویٰ
امریکا نے بگرام ہوائی اڈہ رات کی تاریکی میں خاموشی سے خالی کیا
طالبان سے بچنےکیلیے ایک ہزار سے زائد افغان فوجی تاجکستان میں داخل ہوگئے
طالبان ترجمان کا کہنا تھا کہ میدان جنگ میں مضبوط پوزیشن کے باجود طالبان بات چیت اور مذاکرات کے لیے انتہائی سنجیدہ ہیں۔

دوسری جانب طالبان ترجمان کے بیان پر افغان حکومت کا کہنا ہےکہ اگر طالبان امن کے لیے کوئی تحریری روڈ میپ دیتے ہیں تویہ خوش آئند ہوگا۔

علاوہ ازیں ترجمان امریکی محکمہ خا رجہ کا کہنا ہےکہ طاقت کے ذریعے مسلط کی گئی کسی بھی حکومت کو دنیا قبول نہیں کرےگی، آنے والی افغان حکومت سے اسی صورت تعاون کیا جائیگا جب وہ بنیادی انسانی حقوق کا احترام کرے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں