برطانیہ نے افغانستان میں طالبان حکومت کے ساتھ کام کرنے پر رضامندی ظاہر کردی

برطانیہ نے افغانستان میں طالبان حکومت کے ساتھ کام کرنے پر رضامندی ظاہر کردی۔

برطانوی وزیردفاع بین ویلس نے مقامی اخبار کو انٹرویو دیا اور کہا کہ طالبان نے افغانستان میں حکومت بنائی تو ان کے ساتھ کام کرنے کیلئے تیار ہیں۔

یہ بھی پڑھیں
طالبان کا افغان باب دوستی گیٹ پر کنٹرول کا دعویٰ
طالبان کا افغانستان کے 85 فیصد حصے پر کنٹرول حاصل کرنے کا دعویٰ
ان کا کہنا تھاکہ عالمی برادری کے پاس اس کے سوا کوئی دوسرا راستہ نہیں ہے لیکن عالمی اصولوں پرعمل پیرا کسی بھی افغان حکومت کےساتھ کام کریں گے۔

برطانوی وزیردفاع کا کہنا تھاکہ افغان حکومت نے انسانی حقوق کی خلاف ورزی کی تو تعلقات پرنظرثانی کریں گے۔

طالبان کے ساتھ کام کے حوالے سے ان کا مزید کہنا تھاکہ برطانیہ کے طالبان کے ساتھ مل کر کام کرنے کا امکان متنازعہ ہوگا۔

برطانوی وزیر دفاع نے طالبان اور افغانستان کے صدر اشرف غنی سے کئی دہائیوں کی لڑائی کے بعد ملک میں استحکام لانے کیلئے مل کر کام کرنے کی اپیل بھی کی۔

خیال رہے کہ طالبان کی جانب سے افغانستان کے 85 فیصد علاقوں پر قبضے کا دعویٰ کیا گیا ہے جبکہ اس کے ساتھ ساتھ طالبان نے کئی سرحدی علاقوں پر بھی قبضہ کرلیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں